Tag » PPP

NA 246: Results and (Honest) Statements.

Originally published in the Express Tribune Blogs, on 23rd of April, 2015.

Who bags NA-246 and which party stands victorious tonight makes little difference. What matters is that today’s election will put an end to the environment and politics of fear prevalent in Karachi for years. 777 more words

Blogs

Militants slam Iloilo's water district privatization

ILOILO City – The looming water supply shortage in the City of Iloilo continuously inflicts heavy burden among Iloilo residences and commercial establishments. For the past few weeks, Iloilo City was back on the line of being waterless. 570 more words

News

What needs to go into my Portfolio and Showreel? (23/04/2015)

So now is the time that I am focusing on content for my portfolio, so what does it need to include?

I know that I want to be a character animator, so my portfolio should be primarily character animation. 172 more words

PPP

Assessment of South Africas PPP Framework: Applicability to Municipal Land Disposition and Development

While South Africa has a well-developed national framework for public-private partnerships (PPPs), cities experiences thus far with large-scale urban redevelopment — and, specifically, with competitively soliciting and iteratively structuring economically and socially beneficial arrangements for redevelopment of public lands with the private sector — have been limited. 37 more words

Wereldbank

What is my plan? (20/04/2015)

With only 3 weeks left of University, I am probably very late with this post. But I need to outline a plan of where I am going to target jobs, and how I am going to target them. 340 more words

PPP

عوام نے ضمنی الیکشن کا فیصلہ دے دیا

    

اللہ جسے چاہے عزت دیتا ہے اور جسے چاہتا ہے زلت دیتا ہے بے شک. این اے 246 کے ضمنی الیکشن کی وجہ سے کراچی کے گرم موسم میں سیاست کا درجہ حرارت بھی گرما گرم ہے. ہر طرف سے عوام سے وعدے کیے جارہے ہیں جسکا عوام کو یقین ہے وہ پورے نہیں ہوسکتے. کراچی میں حلقہ این اے 246 کے ضمنی الیکشن کے سلسلے میں ہر جماعت اپنی سیاسی قوت کا مظاہرہ کررہی ہے.ضمنی الیکشن کے سلسلے میں جاری انتیخابی مہم نے انتیخاب سے پہلے اپنے انتیخاب کا فیصلہ کردیا ہے. کراچی میں انتیخابی مہم کے سلسلے میں جماعت اسلامی نے حلقہ این اے 246 میں جلسے کیے مگر وہ عوام کو اپنی طرف متوجہ نہ کرسکے . ایم کیو ایم نے تحریک انصاف کے جلسے سے پہلے چند گھنٹوں کے نوٹس پر عظیم و عالیشان و تاریخی جلسہ کرکے تاریخ رقم کردی جس میں عوام نے اپنی شرکت سے این اے 246 کا فیصلہ سنادیا جسے نہ صرف ایم کیو ایم کے ہمدردوں نے سراہا بلکہ ناقدین کو بھی ایم کیو ایم کے جلسے کی تعریف کرنے پر مجبور کردیا لیاقت آباد کے پل پر جمع ہونے والوں نے واقع بتادیا کہ یہ سیٹ الطاف حسین کی ہے. 18 اپریل کو ایم کیو ایم کے تاریخی جلسے کے بعد 19 اپریل کو تحریک انصاف کے جلسے نے عمران خان صاحب کی کراچی میں سیاسی حیثیت کا فیصلہ دے دیا اور جس طرح کا فرق ایم کیو ایم اور تحریک انصاف ,جماعت اسلامی کے جلسوں میں تھا اتنا ہی فرق 23اپریل کے ضمنی الیکشن میں ہوگا.تحریک انصاف ,عمران خان صاحب اپنے 1ماہ کے نوٹس پر اتنا بڑا جلسہ نہیں کرپا? جو ایم کیو ایم نے چند گھنٹوں کے نوٹس پر کردکھایا.تحریک انصاف کے جلسے میں خان صاحب کی بیگم ریحام خان صاحبہ نے بھی شرکت کی مگر کراچی کی عوام اپنا فیصلہ 18 اپریل کو لیاقت آباد میں ایم کیو ایم کے جلسے میں سناچکی تھی جس کے بعد تحریک انصاف کے جلسے کی سیاسی حیثیت ختم ہوچکی تھی جس کا منہ بولتا ثبوت تحریک انصاف کے جلسے میں خالی کرسیاں تھیں جسے میڈیا نے بھی اپنے کیمروں میں محفوظ کیا اور ایسا ہونا بھی تھا کیونکہ جس طرح سے کشمیر میں جلسے کے دوران عمران خان صاحب نے کراچی کی باشعور عوام اور ایم کیو ایم کے کارکنان کی تذلیل کی اسکی وجہ سے عوام میں بہت غم و غصہ پایا جاتا ہے اور حلقہ این اے 246 کی 90 فیصد آبادی اردو بولنے والے مہاجروں پر مشتمل ہے اور آج تک تحریک انصاف یا عمران خان صاحب نے کبھی مہاجروں کے لیے آواز نہیں اٹھای گزشتہ چند روز پہلے مسلم لیگ نواز کے سینیٹر سلیم ضیا نے ایک نجی ٹی وی چینل پر مہاجروں کی توہین کی “کالا کلوٹہ ” غیر ملکی کہا مگر انکی جماعت نے انکے اس متعصبانہ بیان کے خلاف کوی ایکشن نہیں لیا اس سے پہلے پیپلز پارٹی کے زولفقار مرزا نے مہاجروں کو ننگے بھوکے کہا مگر انکے بیان پر نہ پیپلز پارٹی نے اسکے خلاف ایکشن لیا اور نہ کسی نے ایسے متعصبانہ بیان کے خلاف مہاجروں کا ساتھ دیا.جب خان صاحب مہاجروں کی تذ لیل پر مہاجروں کے ساتھ آواز نہیں اٹھاسکتے تو کیسے مہاجر انھیں برداشت کرسکتے ہیں? ایم کیو ایم نے ہمیشہ مہاجروں کے حقوق کے لیے آواز بلند کی ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین صاحب نے تمام قومیت کے حقوق کے لیے آواز اٹھای جسکی وجہ سے انھیں سازشوں کا بھی سامنا ہے باطل قوتوں نے الطاف حسین اور انکے کارکنان کے اعصاب کا بھرپور امتحان لیا مگر ایم کیو ایم کے کارکنان آج بھی ثابت قدم ہیں.ایم کیو ایم کے مرکز 90 پر 11 مارچ کو چھاپے اور ایم کیو ایم کے کارکنان کی گرفتاریوں سے ایسا تاثر دیا جارہا تھا کہ ایم کیو ایم الطاف حسین کا سیاسی کیریر ختم ہوگیا ہے اور الطاف حسین کی گرفت پارٹی پر کمزور ہوگی ہے عوام ایم کیو ایم سے دور ہورہی ہے اسی تاثر اور خواب خرگوش میں تحریک انصاف نے بھی ایم کیو ایم پر سبقت لے جانے کی کوشش کی اور حلقہ این اے 246 میں مسلسل یہ کہہ رہے ہیں کہ ہم نے خوف کے بت توڑدیے ہیں اور عوام ایم کیو ایم سے چھٹکارا چاہتی ہے مگر شائد عمران خان صاحب کے قریبی لوگ انھیں گمراں کررہے ہیں کراچی کی حقیقت 18 اور 19 اپریل کو واضح ہوگئی. ایم کیو ایم اور الطاف حسین کے مستقبل کی پیشگوئیاں کرنے والوں کو ایم کیو ایم نے اپنے تاریخی جلسے سے بھرپور جواب دیا اور اپنا روایتی منظم جلسہ کرکے سب کی آنکھیں کھول دیں.کراچی کی عوام نے انتیخاب سے پہلے این اے 246 کا نتیجہ پوری دنیا کو دکھا دیا. عمران خان صاحب آپ نے صحیح کہا کراچی سے خوف کے بادل چھٹ گئے ہیں ایم کیو ایم کے میڈیا ٹرائل اور مشکل مراحل کے باوجود اتنی بڑی تعداد میں عوام کا ایم کیو ایم کے جلسے میں شرکت کرنا اس بات کی گمازی کرتی ہے کہ کراچی حق پرستوں کا شہر ہے.